انٹرنیشنل

چائنہ کی کمپنی نے اپنے ملازمین کو شرمناک سزا دے ڈالی

بیجنگ: چائنہ میں کمپنیاں اپنےملازمین کو سخت سزائیں دینے کیلئے کافی شہرت رکھتی ہیں۔کبھی ملازمین کی ناقص کارکردگی پر انہیں کڑوا مشروب پلایا جاتا ہے تو کبھی لال بیگ تک کھانے پر مجبور کیا جاتا ہے۔اب کی بار چائنہ کے شہر زاؤ زوانگ میں ایک کمپنی نے اپنے ملازمین کو شرمناک سزا دی ہے۔تفصیلات کے مطابق کمپنی نے ملازمین کی خراب کارکردگی کے باعث انہیں سڑکوں پر رینگنے پر مجبور کردیا۔چینی شہر میں یہ واقعہ 14 جنوری کو پیش آیا جس میں خواتین سمیت چھ ملازمین کو چاروں ہاتھ پاؤں کے بل سڑک کنارے رینگنے کو کہا
جسے دیکھ کر لوگ حیران رہ گئے۔کمپنی کا کہنا تھا کہ سیلز کا ہدف پورا نہ کرنے پر ملازمین کو سخت سزا دی گئی تا کہ آئندہ ان کی کارکردگی کو بہتر بنایا جا سکے۔ یہ ویڈیو منظر عام پر آنے سےسوشل میڈیا کی جانب سے شدید تنقید کی جارہی ہے۔ویڈیو میں واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ 6 ملازمین سڑکوں پر رینگ رہے ہیں جبکہایک شخص کمپنی کا پرچم لیے آگے بڑھ رہا ہے۔
رینگنے والے افراد نے دفتر کا لباس پہنا ہوا ہے اور کسی قسم کا کوئی حفاظتی انتظام نہیں کیا گیا۔اس واقع کی اطلاع پولیس کو دی گئی جیسے ہی پولیس جائے وقوعہ پر پہنچی تو اس وقت تھکے ہوئے ملازمین ہانپ رہے تھے۔ اسے وقتی طور پر بند کرکے تحقیقات کی جارہی ہیں،تفتیش سے معلوم ہوا کہ یہ ایک کاسمیٹک کمپنی ہے۔

To Top