کویت

غیر ملکیوں کا سرکاری ہسپتالوں میں علاج بند

کویت: وزارت صحت کے باخبر ذرائع سے اطلاع موصول ہوئی ہے کہ وزارت صحت کے فیصلوں کے مطابق اگلے تین سالوں میں تارکین وطن پر سرکاری اسپتالوں میں علاج کروانے پر مکمل پابندی عائد کردی جائے گی ۔ اسکے علاوہ وزارت نے تمام پارلیمانی مطالبات اور تجاویز بھی مسترد کردیں جسکے مطابق گھریلو ملازمین, کویتی خواتین کے بچوں اور خلیجی ممالک کے شہریوں کو کم از کم اس پابندی سے آزاد رکھنے کا مطالبہ کیا گیا تھا ۔ ذرائع نے بتایا کے قانون ساز اداروں کی جانب سے شکایات موصول ہوئی ہیں کہ ایک بڑی تعداد
میں تارکین وطن مخصوص افراد کو اس پابندی سے چھوٹ دی گئی ہے جس میں وزارت کے غیر کویتی ملازمین اور اسٹاف شامل ہے اور انکی وجہ سے سرکاری اسپتالوں پر اتنا بوجھ ہے کہ کویتی شہریوں کو مناسب اور انکے حق کے مطابق علاج معالجے کی سہولت فراہم نہیں کی جا سکتی ۔ باخبر ذرائع کے مطابق فی الوقت اس پابندی کے اطلاق میں وقت درکار ہے کیونکہ نہ تو ہیلتھ انشورنس اسپتالوں نے آپریشن شروع کیا ہے اور نہ ہی نجی اسپتال تارکین وطن کی طبی سہولیات پوری کرنے کے لئے مکمل تیار ہیں

To Top