کویت

پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کے زیر اہتمام سالانہ عظیم الشان محفل حمد و نعت وسیرت الرسول کانفرنس کا انعقاد

کویت سٹی: قرآن مجید کی تعلیم و تربیت کو عام کرنا پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کااولین مقصد ھے انتہائی منظم اور کامیاب کانفرنس کے انعقاد پر کونسل کے تمام اراکین کو مبارکباد پیش کرتا هوں. شمشاد خان تنولی. .سرپرست اعلی پاکستان قرآت و نعت کونسل کے زیر نگرانی تربیت حاصل کرنے والے بچوں نے آج کی کانفرنس میں قرآت، نعت، نقابت،خطابت اور اسلامی معلومات کے حوالے سے بہترین صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا یہی علم نافع ھے اور درحقیقت ھم سب کیلئے صدقہ جاريہ ھے محمد عرفان عادل بانی و صدرہمارے

پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم تمام جہانوں کے لیے رحمت بنکر تشریف لائے قاری طلعت شریف نقشبندی نائب صدر

پاکستان قرآت و نعت کونسل کی ٹیم قرآنی و اسلامی تعلیم و تربیت کے دائرہ کار کو مزید وسعت دے گی آج کی کامیاب کانفرنس ٹیم ورک کا نتیجہ ھے اس پر ھم الله تعالی کے شکرگزار هیں انجینئر سید جنید احمد جنرل سیکرٹری

ثناخوان مصطفی کی پرسوز آواز میں هدیہ عقیدت، بہترین نظامت، کویت کے طول و عرض سے کثیر تعداد میں مرد و خواتین کی شرکت، هال تنگ دامانی کا منظر پیش کرنے لگا، بچوں کی قرآت، نعت، نقابت اور خطابت کے حوالے سے شاندار کارکردگی، فکر انگیز خطابات ،درودوسلام کے نذرانے اور رقت آمیز دعا نے حاضرین پر وجد کا ساماں طاری کر دیا

پاکستان قرآت و نعت کونسل کے زیر نگرانی تربیت حاصل کرنے والے بچوں نے قرآت، نعت، نقابت اور خطابت کے حوالے سے اپنی صلاحیتوں کا شاندار مظاہرہ کرکے حاضرین کے دل جیت لئے

پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت پاکستانی کمیونٹی کی ایک فعال تنظیم ھے جو عوام الناس میں بالعموم اور بچوں میں با الخصوص قرآنی اور اسلامی تعلیم و تربیت کے حوالے سے بہترین خدمات سر انجام دے رہی ہے اسکی بنیاد 2014 میں پاکستانی کمیونٹی کی معروف سماجی شخصیت محمد عرفان عادل نے اس مقصد اور نظرئیے کے تحت رکھی کہ فن قرآت، نعت، نقابت اور خطابت کے حوالے سے عوام الناس اور خصوصا بچوں کو تربیت فراہم کی جائے. اسی مشن کو لیکر کونسل کی ٹیم شبانہ روز مصروف عمل ھے اور مختلف علاقوں میں تعلیم و تربیت کے حوالے سے کلاسز کامیابی سے جاری هیں کونسل کے زیر اہتمام ہر سال سالانہ محفل حمد و نعت وسیرت الرسول کانفرنس کا انعقاد کیا جاتا ہے جس میں معروف ثناخوان مصطفی هدیہ نعت پیش کرتے ہیں بچے قرآت، نعت، نقابت اور خطابت کے حوالے سے اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرتے ہیں اس سال بھی پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کے زیر اہتمام سالانہ عظیم الشان محفل حمد و نعت وسیرت الرسول کانفرنس کا انعقاد مورخہ 29 نومبر بروز جمعرات کویت کے ایک معروف هوٹل میں کیا گیا. جسکی صدارت پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کے بانی اور صدر محمد عرفان عادل نے کی کانفرنس میں کویت کے طول و عرض سے سینکڑوں کی تعداد میں شرکت کی کہ هوٹل کا وسیع و عریض هال بھی تنگ دامانی کا منظر پیش کرنے لگا. پروگرام کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ھوا جسکی سعادت کویت کے نامور قاری عبد الغفور اور قاری صہیب انجم نے حاصل کی، نظامت کے فرائض محمد زمان چشتی اور عبدالرحمن آصف نے احسن طریقے سے انجام دیئے جبکہ هدیہ عقیدت بحضور سرور کونین صلی اللہ علیہ وسلم پیش کرنے والوں میں محمد ایوب،محمد نواز،محمدآلیاس،خالد شکیل، رانا عرفان قادری،عاقب اعجاز،عبدالعزیز عصم،محمد سرور نقشبندی اور مجاہد چشتی شامل تھے
کونسل کے جنرل سیکرٹری انجینئر سید جنید احمد نے اس موقع پر بچوں کی تعلیم و تربیت کے حوالے سے اظہار خیال کرتے ھوئے کہا کہ ھمارا مقصد قرآن کی تعلیم کو عام کرنا ھے اور الحمدالله گزشہ چار سالوں سے کونسل کے سرپرست اعلی شمشاد خان تنولی، بانی و صدر محمد عرفان عادل، نائب صدر قاری طلعت شریف نقشبندی اور تمام ٹیم ممبران اس مشن کو کامیابی کے ساتھ جاری رکھے ھوئے هیں اور آج کے پروگرام میں ھماری کلاسز کے چند ننھے پھول اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کریں گے ان بچوں کو یہاں پیش کرنے کا مقصد انکی حوصلہ افزائی کرنا ھے تا کہ دین کے ساتھ انکی محبت میں اضافہ ھو اور یہ مزید ذوق و شوق کے ساتھ قرآنی تعلیم و تربیت حاصل کریں اسکے ساتھ ھی انہوں نے تمام بچوں کو سٹیج پر آنے کی دعوت دی پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کے زیر نگرانی تربیت حاصل کرنے والے بچوں نے قرآت، نعت، نقابت اور خطابت کے حوالے سے اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کر کے حاضرین کے دل جیت لئے . محمد یاسین نے بہترین نقابت کی جبکہ عبدالرحمن جہانگیر اور عبدالرحمن آصف نے خوبصورت انداز میں تلاوت قرآن پاک پیش کی. نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم محمد علی حسن نے دلنشین انداز میں پیش کر کے سماں باندھ دیا. فہد شفیق الرحمان اور سید اذیان نقیب نے اپنے معصوم اور سادہ لہجے میں تقریر کر کے حاضرین کے دل جیت لئے. اسلامی اور قرآنی معلومات کے درست جوابات دینے والے بچوں میں سمرہ عمر، زینب جہانگیر، عریشہ فاطمہ، محمد عارب،محمد غوری،عبدالرحمن، عادل خان اور سید افنان شامل تهے
کونسل کے نائب صدر قاری طلعت شریف نقشبندی نے
رسول اکرم ﷺ بحیثیت رحمۃ للعالمین خطاب کیا انہوں نے کہا کہ
رحمت اس جذبہ کو کہتے ہیں جس کی وجہ سے ایک ذات دوسری ذات کے ساتھ محبت و شفقت،لطف وکرم اور فضل و احسان کا برتاو کرتی ہے اور انہیں موت سے زندگی ،اندھیرے سے اجالے اور بے قراری سے امن وسکون کی طرف لے جاتی ہے۔یہ جذبہ اللہ تعالیٰ نے تمام حیوانات کے اندر کم وبیش ودیعت فرمایاہے اسی وجہ سے ایک جانور بھی اپنے بچوں سے محبت کا اظہار کرتا ہے اور اسے دشمنوں کا شکار ہونے سے بچانے کی ہر ممکن کوشش کرتا ہے ۔
مگر تمام مخلوقات میں یہ جذبہ سب سے زیادہ اللہ تعالیٰ نے اپنے حبیب مکرم ﷺکو عطا فر مایا،اور آپ کی رحمت کو زمان ومکان ،دوست ودشمن،انسان وحیوان کی تمام تر قیودات سے الگ کر کے بیان فر مایا:و ماارسلناک الا رحمۃ للعالمین۔اے محبوب ہم نے آپ کو دونوں جہان کے لئے رحمت بنا کر بھیجا ۔
اسی لئے آپ ﷺ کی رحمت کا دائرہ کسی خاص قوم اور کسی خاص جماعت کے لئے محدود نہ تھا بلکہ آپ جس طرح اپنے دوستوں کے لئے رحمت تھے ویسے ہی اپنے دشمنوں کے لئے بھی،جیسے تمام انسانوں کے لئے رحمت تھے ویسے ہی تمام حیوانوں کے لئے بھی،آپ ﷺ کی سیرت طیبہ کے ہر پہلو میں آپ کی رحمت کے جلوے کو دیکھا جا سکتا ہے
پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کےبانی و صدر محمد عرفان عادل نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قرآن مجید کی آیت مبارکہ کو اپنے خطاب کا مرکز بنایا
وَرَفَعْنَا لَکَ ذِکْرَکَ.
(الانشراح:4)
’’اور ہم نے آپ کی خاطر آپ کا ذکر (اپنے ذکر کے ساتھ ملا کر دنیا و آخرت میں ہر جگہ) بلند فرما دیا‘‘۔
پس ساری خلق اور ساری کائنات پر حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بلند ہیں۔ اللہ کی خلق میں سے ہر شے حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مقام و مرتبہ سے نیچے ہے خواہ وہ عالم جمادات ہو یا عالم نباتات، عالم حیوانات ہو یا جنس و انس و ملائک، کائنات ارض و سماء کی ہر شے سے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بلند ہیں اور ہر شے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے نہ صرف نیچے ہے بلکہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے تابع ہے۔
آج امت مسلمہ پریشان اور زوال کا شکار ہے۔ اس کی وجہ ہی یہ ہے کہ ہم نے آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ اپنے تعلق کا حق ادا نہیں کیا۔ افسوس ہم اپنے اوپر بھروسے کرگئے اور اپنا تعلق آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات سے عشق و محبت اور اطاعت و اتباع کا تعلق کاٹ دیا۔ نتیجتاً شکست خوردہ ہوگئے۔ ہم نے آقا علیہ السلام کی محبت کے صرف نعرے لگائے اور ہماری زندگیوں میں عشق مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم عمل کی شکل میں نظر نہیں آتا۔ ہم حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی محبت کے دعوے کرتے ہیں مگر سیرت مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے رنگ میں ہماری سیرتیں ڈھلتی نظر نہیں آتیں۔
آئیں! عہد کریں کہ اپنی سیرتوں کو مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی سیرت اور اسوہ کے تابع کریں گے۔ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے عشق اور محبت کا وہ درس لیں جو دلوں میں عشق کی چنگاری بھڑکادے۔۔۔ زندگی کو آقا علیہ السلام کے طرز عمل اور اسوہ حسنہ کے مطابق ڈھالیں۔۔۔ ظاہر اور باطن میں حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی غلامی میں آجائیں۔۔۔ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے درس کو اپنانے سے ہی انسان، انسان سے محبت کرے گا۔۔۔ مسلمان مسلمان سے محبت کرے گا۔۔۔ ہمسایہ، ہمسائے سے محبت کرے گا۔۔۔ غریب، امیر سے اور امیر، غریب سے محبت کرے گا۔۔۔ رشتہ دار، رشتہ دار سے محبت کرے گا۔۔۔ ہر فرد اپنے معاشرے سے محبت کرے گا اور نتیجتاً معاشرے سے بے چینی اور غربت ختم ہوجائے گی۔ انہوں نے تمام شرکاء، ثناخوان مصطفی، قرآت، نعت، نقابت، خطابت اور اسلامی معلومات کے حوالے سے اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے والے بچوں، تمام میڈیا نمائندگان اور بالخصوص پاکستان قرآت و نعت کونسل کویت کی تمام ٹیم جن میں انجینئر سید جنید احمد، قاری طلعت شریف نقشبندی، محمد صفدر،حاجی منظور احمد، قیصر شہزاد، منیر چوهدری، محمد شہباز، عابد حسین، محمد عرفان، اظہر رسول، محمد هارون، میاں انور خورشید، محمد اعجاز بهٹی، انجینئر سلیم چوہدری، سہیل یونس، محمد سلیمان، صوفی نذیر احمد، سید ندیم یار خان اور محمد بوٹا شامل ہیں ان سب کی خدمات کو شاندار خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ کونسل کے تمام اراکین نے بہترین ٹیم ورک کا مظاہرہ کیا ھے جس پر وہ سب مبارکباد کے مستحق هیں اسکے بعد تمام طلبہ میں میڈل تقسیم کئے گئے جو انہوں نے سید صداقت علی، ڈاکٹر جہانزیب عثمان، محمد سرور بٹ،حاجی عبالرشید اور محمد یونس بهٹی کے هاتهوں وصول کیے
کونسل کے سرپرست اعلی شمشاد خان تنولی نے اظہار خیال کرتے ھوئے کہا کہ محبت رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ایمان کا حصہ ھے اور سیرت طیبہ پر عمل آخرت کی کامیابی ھے انہوں نے کہا میں انتہائی منظم اور کامیاب کانفرنس کے انعقاد پر کونسل کے تمام اراکین کو مبارکباد پیش کرتا هوں آپ سب کی کامیابی کے لئے دعا گو هوں.
اسکے بعد عبدالروف بهٹی اور اعجاز مغل نے درود و سلام کا نذرانہ پیش کیا اور حاجی عبالرشید نے رقت آمیز دعا کی.

To Top