انٹرنیشنل

اپنے ہی دوست کو قتل کر کے اس کا خون پینے والا ویمپائر شخص

روس میں پولیس نے ایک ایسے شخص کو گرفتار کیا ہے جس نے اپنے دوست کو قتل کرکے اس کا خون پی لیا تھا۔بورس نامی 36 سالہ شخص روس کے شہر چیلیا بنس کے اورسلز سٹی اسپتال میں زیر ملازمت ہے۔ بورس پر ایک الزام یہ بھی ہے کہ اس نے ڈاکٹریٹ کی جعلی ڈگری اور جعلی کاغذات کی بنا پر اسپتال میں ملازمت حاصل کی۔روسی میڈیا کا کہنا ہے کہ بورس نے اپنے 16 سالہ دوست کو مار کر اس کا خون پیا ہے جبکہ بورس نے بیان دیا ہے کہ وہ ایک “ویمپائر” ہے۔
اسپتال میں صحت کے شعبے کی سربراہ نتالیا گورلوا کا کہنا ہے کہ کونڈراشین کو پرائمری کیئر ڈاکٹر کی حیثیت سے اسپتال میں ملازمت دی گئی تھی،ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے ان کے تجربے کے حوالے سے زیادہ جانچ اس لیے نہیں کی کہ بورس نےاپنے ضروری کاغذات ہی نہیں دئیے اس کا کہنا تھا کہ کسی وجہ سے اس کے کاغذات کھوگئے ہیں۔بورس کونڈراشین کی بہن جو خو دبھی ایک ڈاکٹر ہیں ان کا کہنا ہےکہ انہیں اور ان کی والدہ کو بورس کی ملازمت کے بارے میں معلوم نہ تھا
اور اسے نفسیاتی اسپتال سے اس بات کی یقین دہانی کے بعد ڈسچارج کیا گیا تھا کہ وہ کسی کو نقصان نہیں پہنچائے گا۔ بورس کے فزیشن نے اس کی سوشل میڈیا پر تصویر دیکھ کر پہچان لیا جس میں ڈاکٹر کا کوٹ پہن کر مسکرا رہا تھا۔جس کے بعد قتل کی اطلاعات ملتے ہی اس کو گرفتار کر لیا گیا۔خیال رہے کہ سال 2000 میں بورس کو شیزوفرینیا کا مرض تشخیص ہواتھااور اس نے ایک نفسیاتی اسپتال میں 10 سال گزارے تھے۔

To Top