17

بھارت نے بغیر اطلاع پاکستان میں پانی چھوڑ دیا

لاہور: بھارت نے آخر کار گھٹیا پن کا مظاہر ہ کرتے ہوئے دریائے راوی،ستلج اور چناب میں پانی چھوڑ دیا ہے جبکہ خطرناک ریلا پاکستان میں داخل ہو گیا ہے۔

ضرور پڑھیں: دنیا بھر میں خود کشی کی شرح میں بھارتی خواتین سب سے زیادہ

تفصیلات کے مطابق چناب کے معاون دریاؤں جموں اور توی میں بھی سیلابی کیفیت، قصور، نارووال، مرالہ کے مقامات پر دریاؤں کی سطح اچانک بلند ہونا شروع ہو گئی، دریاؤں کے بیٹ میں واقع آبادیوں کو خطرہ ہے۔

ذرائع وزارت پانی و بجلی کے مطابق بھارت نے فیروز پور ہیڈ ورکس کے گیٹ بھی کھول دئیے۔ راوی میں مادھوپور ہیڈورکس سے چھوڑا گیا پانی جسڑ کے مقام پر پاکستان میں داخل ہوا،گزشتہ رات بہاؤ

1300، پیر کی صبح 4 ہزار کیوسک تک پہنچ گیا۔ ذرائع کے مطابق بھارت کیساتھ ستلج میں 50 اور راوی میں 30 ہزار کیسک پانی چھوڑے جانے پر پیشگی اطلاع کا معاہدہ ہے۔

ادھر سیالکوٹ، نارووال، شکر گڑھ میں طوفانی بارش سے دریائے جموں توی اور ندی نالے بپھر گئے، متعدد دیہات کو خالی کرا لیا گیا، ہیڈمرالہ اور نالہ ڈیک میں سیلاب کی وارننگ جاری کر دی گئی۔
نالہ ڈیک میں اونچے درجے کے سیلاب سے 80 سے زائد دیہات کا زمینی رابطہ منقطع ہونے کا خدشہ پیدا ہو گیا، نالے میں پانی کی گنجائش خطرے کے نشان سے صرف ایک سو کیوسک میٹر دور رہ گئی، ہیڈمرالہ کے مقام پر بھی فلڈ الرٹ جاری کر دیا گیا۔

شکر گڑھ میں مسلسل 18 گھنٹوں کی بارش سے دریائے راوی میں پانی کی سطح بلند ہونے لگی، نالہ بئیں اور نالہ بسنتر میں نچلے درجے کا سیلاب آ گیا، نارووال میں آٹھ گھنٹے مسلسل بارش سے ظفروال کے نالہ ڈیک میں سیلاب کی وارننگ جاری کر دی گئی۔ نالے کے کنارے پر واقع متعدد دیہات کے مکینوں نے محفوظ مقامات پر منتقل ہونا شروع کر دیا۔

لاہور میں بھی وقفے وقفے سے کہیں تیز اور کہیں ہلکی بارش ہوئی، تیز ہواؤں نے خنکی بھی بڑھا دی۔ موسم کی خبر دینے والوں نے گوجرانولہ، لاہور ڈویژن میں کئی مقامات پر مزید بارش کی پیشگوئی کر دی، کشمیر میں بھی تیز ہواؤں کے ساتھ بادل برس سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

بھارت نے بغیر اطلاع پاکستان میں پانی چھوڑ دیا” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں